مودی حکومت کو دن میں تارے نظرآگئے،خفیہ ایجنسیوں نے خبر دار کردیا

انڈیا جانے کیلئے زیر زمین سرنگیں ،چین کی جانب سے بھارت میں کارروائی کیلئے ایسا اقدام کہ مودی حکومت کو دن میں تارے نظرآگئے،خفیہ ایجنسیوں نے خبر دار کردیا
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )چین لداخ کے سرحدی علاقوں پر فوجی تنصیبات قائم کر رہا ہے۔ بھارتی خفیہ ایجنسیوں کا دعویٰ ،میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی خفیہ ایجنسیوں کی مرتب کردہ ایک رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ملک کے اندرونی کشیدہ ماحول سے فائدہ اٹھاتے ہوئے چین لداخ کے سرحدی علاقوں میں اپنے فوجی انفراسٹرکچرکے ذریعے بھارت کے خلاف بڑے پیمانے پر تیاریوں میں مصروف ہے۔چین کی لبریشن آرمی لداخ کے سرحدی علاقہ پن گانگ جھیل کے قریب فوجی تنصیبات قائم کر رہا ہے یہ فورسز کسی بڑی کارروائی کے لیے زیر زمین سرنگیں بھی تعمیر کر رہی ہے۔اس متنازعہ علاقہ پر لبریشن آرمی نے خیمے بھی نصب کر دئیے ہیں جو بھارتی سیکورٹی تنصیبات کے لیے انتہائی تشویشناک ہے،پن گانگ جھیل کے شمالی ساحل کے 134 کلومیٹر علاقہ میں دونوں ممالک کی افواج کا آمنا سامنا اب معمول کی بات بن چکی ہے ۔

Underground tunnels to go to India
Islamabad (Monitoring Desk) China is setting up military installations on Ladakh border areas. Indian intelligence agencies claim, according to media reports, a report compiled by Indian intelligence agencies revealed that China took advantage of the internal tensions in the country to prepare for a massive crackdown against India through its military infrastructure in the Ladakh border. The Liberation Army of China is setting up military installations near Pan Gang Lake, a border area of ​​Ladakh. The force is also building underground tunnels for a major operation. The Liberation Army also installed tents on the disputed territory. Which is very worrisome for Indian security installations, PIN Facing the armies of the two countries has now become the norm in the 134km area on the north coast of Gang Lake.

اپنا تبصرہ بھیجیں