مسلم کانفرنس اور پی ٹی آئی میں اتحاد کا فارمولہ بھی طے

مسلم کانفرنس اور پی ٹی آئی میں اتحاد کا فارمولہ بھی طے

اسلام آباد(نیوز) وزیراعظم پاکستان عمران خان سے آزادکشمیر کے سابق صدر و وزیر اعظم سردارسکندر حیات خان اورآزادکشمیر کے سابق وزیراعظم و پی ٹی آئی کشمیرکے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی وزیر اعظم ہاؤس میں تفصیلی ملاقات۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم پر ہم ہر فورم پر آواز اٹھاتے رہیں گے ۔ ویسے تو ہم ہر سال 5 فروری کو کشمیری عوام سے یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں لیکن اس دفعہ وہاں مختلف صورتحال کا سامنا ہے کیونکہ مقبوضہ کشمیر میں ساڑھے پانچ ماہ سے کرفیو نافذ ہے لہذا ہمیں پہلے سے زیادہ متحد ہو کر کشمیری عوام سے یکجہتی کا اظہارکرنا ہوگا اور میں اس سلسلے میں 5 فروری کو میرپور میں جلسہ عام سے خطاب کرکے مقبوضہ کشمیرکے عوام سے اظہار یکجہتی کروں گا۔ پاکستان کشمیریوں کی سیاسی ، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔
سردار سکندر حیات خان نے وزیراعظم عمران خان کو دنیا بھر میں مسئلہ کشمیر کو بھرپور اور موثر انداز میں اجاگر کرنے پر خراج تحسین پیش کیا اور وزیراعظم عمران خان کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا۔


انتہائی قریبی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سردار سکندر حیات کو پی ٹی آئی آزاد کشمیر اہم ذمہ داری سونپنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے ، تحریک انصاف کی آزاد کشمیر میں مظبوطی کا واحد طریقہ سردار سکندر حیات کی پارٹی میں شمولیت کی صورت میں ہی ممکن ہے ، آئندہ چند دنوں میں اہم فیصلے متوقع، سردار سکندر حیات آزاد کشمیر کے اندر ماضی کی طرح ن لیگ کی طرزکا راجپوت بلاک بنائیں گے ،
تمام معاملات زلفی بخاری کی سردار سکندر سے ملاقات میں طے پا گئے ہیں ، اس ملاقات میں مسلم کانفرنس اور پی ٹی آئی میں اتحاد کا فارمولہ بھی طے پا گیا ہے اور چند روز میں آزاد کشمیر حکومت میں بھی تبدیلی آسکتی ہے ، آزاد حکومت کی اہم شخصیات بہت جلد پارتی چھوڑ کر فاروق حکومت کو مشکل میں ڈال دیں گے۔
تاہم سیاسی تجزیہ کاروں نے سکندر عمران ملاقات کو آزاد کشمیر کی سیاسی تبدیلی قرار دیدیا ہے

[X]