پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے مزاحمت کے بجائے راہ ہموار کی، مسلم کانفرنس نظریے پر قائم ہے

پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے مزاحمت کے بجائے راہ ہموار کی، مسلم کانفرنس نظریے پر قائم ہے
ہمارے نظریے سے کشمیریوں کا مستقبل وا بستہ ہے ، 95ء میں میں نے ملٹری ڈیمو کریسی کی حمایت کی تھی

نعمانپورہ ،باغ ( نمائندگان )سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر و قائد مسلم کانفرنس سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کا سٹیٹس تبدیل کرنے کے لیے مسلم کانفرنس کو دو لخت کیا گیا ، گلگت بلتستان کے سٹیٹس کو تبدیل کرنے کے لیے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے مزاحمت کے بجائے راہ ہموار کی مسلم کانفرنس نے 1932ء میں اپنے قیام سے ہی منزل کا تعین کر دیا تھا، ہم اپنے نظریے سے غافل ہیں نہ ہی کوئی شرمندگی ہے ، آج مقبوضہ کشمیر میں فاروق عبداللہ ، محبوبہ مفتی نے بھی قائد اعظم کے موقف اور مسلم کانفرنس کے نظریے کی حمایت کر کے ثابت کیا کہ مسلم کانفرنس کے نظریے سے کشمیریوں کا مستقبل وا بستہ ہے ، 1995ء میں میں نے ملٹری ڈیمو کریسی کی حمایت کی تھی ، پاکستان کو موجودہ سیاستدانوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا ، قائد اعظم محمد علی جناح بھی ایک سیاستدان تھے جو پاکستان کے نہیں بلکہ عالمی سیاستدان کہلاتے تھے ، گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے میں پیپلز پارٹی نے اپنا کردار ادا کیا جبکہ نواز لیگ نے اپنا کندھا پیش کیا ، رابطہ عالم اسلامی کی سپریم کونسل میں پاکستان اور آزاد کشمیر سے اکلوتا ممبر منتخب ہوا ہوں ، اس پر مجھے فخر ہے کہ میں نے آزاد کشمیر اور پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ سعودیہ کے اندر رابطہ عالم اسلامی کانفرنس میں دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ ریاست کا پرچم بلند کیا ، ہمارے سیاستدانوں نے آزاد جموں و کشمیر کا سٹیٹس تبدیل کرنے کی کوشش کی تو مسلم کانفرنس شدید مزاحمت کرے گی ، آج مقبوضہ کشمیر کے اندر ظلم و بربریت کا بازار گرم ہے یاسین ملک، سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور آسیہ اندرابی کو بچانے کی ضرورت ہے ، جبکہ مقبوضہ کشمیر کے حریت رہنمائوں اور مظلوم کشمیریوں کو بچانے کے بجائے یہ پوچھا جاتا ہے کہ یہ مکان کیسے بنا اس کے اخراجات کہاں سے آئے ، مسلم کانفرنس کو کمزور کر کے قومی مفاد اور دفاع پاکستان کو نقصان پہنچانے والوں کو منظر عام پر لایا جائے ، خود مختار کشمیر کے نظریے کا بھی احترام کرتے ہیں ، لیکن اس کا یہ مطلب ہر گز نہیں کہ ہم اپنے نظریے اور عقیدے سے غافل ہو جائیں ، سلامتی کونسل کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے مسئلہ کشمیر پر اجلاس بلائے ، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے بھی کشمیریوں کی حمایت کی ، چین اور روس کے بھی شکر گزار ہیں کہ انہوں نے کشمیریوں کی حمایت کی ، حکومت پاکستان آزاد کشمیر کی سیاسی قیادت سے مل کر حکمت عملی مرتب کرے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے باغ میں سردار عبدالسمیع ایڈووکیٹ کے اعزاز میں منعقدہ استقبالیہ تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا ، تقریب کی صدارت صدر مسلم کانفرنس ضلع باغ سردار عبدالرشید چغتائی نے کی جبکہ تقریب سے سابق وزیر حکومت راجہ محمد یاسین خان ، چیف آرگنائزر مسلم کانفرنس و سابق وزیر دیوان علی چغتائی ، سردار عبدالسمیع ایڈووکیٹ ، سردار منظور حسین ایڈووکیٹ، سردار عبدالرشید چغتائی صدر مسلم کانفرنس ضلع باغ ، عنصر پیر زادہ صدر مسلم کانفرنس ہٹیاں ، سید آزاد گردیزی ،سردار صغیر بیگ ، سردار افتخار رشید ، سردار جاوید خلیل عباسی ، شجاع منگول ایڈووکیٹ ، سردار نوید انور ،راجہ نثار ، خالد اکبر عباسی، راجہ شاہد عزیز ،عمیر ایڈووکیٹ،سید خالد امیر گردیزی، شجاع منگول ایڈووکیٹ، سیدہ نائلہ گردیزی ، راجہ نجیب ایڈووکیٹ ، حامد منطور ایڈووکیٹ، ظفر عباسی، راجہ طاہر یاسین، سردار ارشاد، انقلاب عباسی، حافظ افضل،محمد اقبال خان ، معین علی، چیئرمین گلزار، مجیب الرحمن ،حفیظ گلزار، ذیشان یونس ودیگر نے بھی خطاب کیا، سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ آج دنیا میں متنازعہ ممالک کی بات ہو رہی ہے رابطہ عالم اسلامی میں جہاں مسجد اقصیٰ، سیریااور دیگر مسلم امہ کے مسائل زیر بحث ہیں وہاں کشمیر کے ایجنڈے کو بھی شامل کیا گیا ہے سعودی عرب نے مشکل وقت میں دیگر ممالک کے ساتھ کشمیر کا پرچم لہرا کر مودی کو پیغام دیا ہے کہ سعودیہ کشمیریوں کے ساتھ ہے انہوں نے کہا کہ وادی نیلم قیامت میں ڈوبا ہے ، وادی کے لوگ فوجی مورچوں کو پہرا دینے کے لیے مشکل ترین علاقوں میں آباد ہیں ، وادی نیلم کے متاثرین کی بحالی کے لیے فوری اور عملی اقدامات کیے جائیں سردار عبدالسمیع ایڈووکیٹ کی شرافت ، دیانتداری ، اور استھکامت کا معترف ہوں راجہ یاسین کی تجویز پر سردار عبدالسمیع مرکزی نائب صدر منتخب ہوئے جنرل پرویز مشرف کی کشمیر پر تجاویز بہترین تھیں ، انٹرا کشمیر ٹریڈ اور باپمی بات چیت سے مسائل کا حل پرویز مشرف کی تجاویز میں شامل تھیں ، سیاسی کارکنوں کو معلوم ہونا چاہیے کہ مسئلہ کشمیر کا کونسا حل کشمیریوں کے مفاد میں ہے اور کشمیریوں سے پوچھے بغیر کسی فیصلے کو کشمیری قبول نہیں کریں گے، جب مسلم کانفرنس کو کمزور کیا جا رہا تھا تو میں نے متعدد مرتبہ کہا کہ مسلم کانفرنس کو کمزور کرکے کشمیر کاز کو نقصان پہنچایا جائے گا اور پھر وہی ہوا مسلم کانفرنس کو کمزور کرکے گلگت بلتستان کے سٹیٹس کو تبدیل کیا گیا اور ہندوستان کو موقع دیا گیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرے ، آبادی کے تناسب کو تبدیل کرے ، ریاست کے تشخص اور وحدت کشمیر کے لیے مسلم کانفرنس اپنا بھر پور کردار ادا کرے گی، تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راجہ محمد یاسین خان نے کہا کہ سردار عبدالسمیع ایڈووکیٹ بڑے کردار کے مالک ہیں ، نشیب و فراز کے باوجود سیاسی استحکامت کا ہمیشہ مظاہرہ کیا ، سردار عبدالسمیع ایڈووکیٹ کا مرکزی نائب صدر منتخب ہونا جماعت کی مضبوطی کا باعث بنے گا ، دیوان علی چغتائی چیف آرگنائزر مسلم کانفرنس نے کہا کہ مسلم کانفرنس ریاست کے دونوں اطراف کی نمائندہ جماعت ہے ، 72سالوں میں پہلی مرتبہ دیگر ممالک کے ساتھ سعودیہ کے اندر رابطہ عالم اسلامی کانفرنس میں کشمیر کا پرچم لہرایاگیا اس پر کشمیری سردار عتیق احمد خان کو سلام پیش

[X]