سروسز اسپتال میں 20 سالہ نرس کو ڈیوٹی کے دوران اغوا کر لیا گیا ہم نے دو سال قبل نکاح کیا تھا،شاکرہ نے گھر والوں سے نکاح کو چھپائے رکھا۔ملزم کا بیان

سروسز اسپتال میں 20 سالہ نرس کو ڈیوٹی کے دوران اغوا کر لیا گیا
ہم نے دو سال قبل نکاح کیا تھا،شاکرہ نے گھر والوں سے نکاح کو چھپائے رکھا۔ملزم کا بیان

لاہور ( 01 فروری 2020ء) 20 سالہ نرس کو ڈیوٹی کے دوران اغوا کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق شاکرہ نامی نرس کو پولیس کے بھائی نے رشتہ نہ ملنے کی رنجش پر اغوا کیا۔اہلخانہ نے الزام عائد کیا ہے کہ بیٹی کو ڈیوٹی کے دوران اغوا کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ملزم نے گذشتہ سال سے ہم سے بیٹی کا رشتہ مانگا تھا۔ہم نے رشتہ دینے سے انکار کر دیا تھا۔ کیونکہ ملزم پہلے سے شادی شدہ تھا اور اس کے دو بچے بھی تھے۔ ہماری بیٹی اس بھیڑے کی قید میں ہے جب کہ ہم در بدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ وقاص اور اس کا بھائی وہاب لڑکیوں کو بلیک میل کرتے ہی۔جب کہ ملزم وہاب کا کہنا ہے کہ اس کا دو سال قبل شاکرہ سے نکاح ہوا تھا۔دونوں لاہور میں مقیم تھے۔شاکرہ نے نکاح کے حوالے سے گھر والوں کو نہیں بتایا ہوا تھا۔پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کر لیا ہے،مقدمہ شاکرہ کی والدہ کی مدعیت میں درج کیا گیا ہے۔پولیس نے اس حوالے سے تفتیش کا آغاز کر دیا ہے اور ملزم کو بلا کر بھی پوچھ گچھ کی گئی۔خیال رہے کہ 20سالہ شاکرہ سروسز اسپتال میں بطور نرس کام کرتی ہے۔

[X]

اپنا تبصرہ بھیجیں