دُبئی: پاکستانی ملازم گاڑی میں سے قیمتی رولیکس واچ اور نقد رقم چوری کرنے پر گرفتار

دُبئی: پاکستانی ملازم گاڑی میں سے قیمتی رولیکس واچ اور نقد رقم چوری کرنے پر گرفتار

ملزم ایک ہوٹل کی پارکنگ میں ملازم تھا جہاں اُس نے گاہکوں کی گاڑی پارک کرنے کے دوران چوری کی واردات کی تھی
دُبئی( فروری 2020ء) دُبئی میں ایک ہوٹل کی پارکنگ میں ملازم پاکستانی نوجوان کو گاڑی میں سے بیش قیمت رولیکس گھڑی اور 1,835 درہم چُرانے پر گرفتار کر لیا ہے۔ ملزم والٹ پارکنگ کا ملازم تھا جو ہوٹل میں آنے والے افراد کی گاڑیاں اُن سے لے کر خود پارکنگ میں چھوڑ کر آتا تھا۔ وقوعہ کے روز بھی دو اماراتی افراد بُر دُبئی کے علاقے میں واقع ایک ہوٹل میں آئے جہاں انہوں نے اپنی گاڑی پارکنگ کے 31 سالہ پاکستانی ملازم کے حوالے کر دی۔ جو اُسے پارکنگ میں چھوڑ آیا۔ بعد میں جب وہ واپس گاڑی میں بیٹھے تو انہیں احساس ہوا کہ گاڑی میں رکھی 50 ہزار درہم مالیت کی رولیکس گھڑی غائب تھی اس کے علاوہ 1835 درہم کی نقدی بھی موجود نہ تھی۔ اماراتی گاہکوں نے ہوٹل کی انتظامیہ سے رجوع کر کے اُنہیں سارے معاملے سے آگاہ کیا۔ پارکنگ کے سیکیورٹی سُپروائزر نے ملزم سے پوچھ گچھ کرنے کی بجائے اُسے رنگے ہاتھوں پکڑنے کا منصوبہ تیار کیا۔ جس کے تحت ایک جاننے والا شخص خود کو گاہک ظاہر کر کے گاڑی میں آیا اور پاکستانی ملازم کو گاڑی پارکنگ میں لے جانے کو کہا۔ منصوبے کے تحت گاڑی میں 20 درہم کا نوٹ بھی رکھ دیا گیا۔ جب بعد میں گاڑی کو چیک کیا گیا تو اس میں دانستہ چھوڑا گیا 20 درہم کا نوٹ غائب تھا۔ جس کے بعد پاکستانی ملزم کو چوری کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا۔ ملزم نے پولیس کے روبرو اماراتی گاہکوں کی مہنگی رولیکس گھڑی اور نقد رقم چُرانے کا بھی اعتراف کر لیا۔ عدالت میں استغاثہ کی جانب سے ملزم پر چوری، امانت میں خیانت اوراپنی ڈیوٹی کا غلط استعمال کرنے کے الزامات عائد کیے گئے۔ اس مقدمے کا فیصلہ 26 فروری 2020ء کو سُنایا جائے گا جس میں ملزم کو سزا سُنائے جانے کا بھرپور امکان ہے۔

[X]

اپنا تبصرہ بھیجیں