پاکستانی نوجوان کی سفری دستاویزات میں دھوکا دہی ، دُبئی ایئرپورٹ پر گرفتار

جعلی برطانوی پاسپورٹ پر جرمنی جانے والا دُبئی ایئرپورٹ پر گرفتار
امیگریشن حکام نے پاکستانی نوجوان کی سفری دستاویزات چیک کیں تو اُس کی دھوکا دہی سامنے آ گئی

دُبئی( 13فروری 2020ء) دُبئی پولیس نے ایک پاکستانی نوجوان کو دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ 20 سالہ پاکستانی نوجوان کی گرفتاری اُس سے برطانیہ کا جعلی پاسپورٹ اور ویزہ برآمد ہونے پر کی گئی۔ ملزم جعلی دستاویزات کے ساتھ دُبئی سے جرمنی کی فلائٹ پر روانہ ہو رہا تھا، تاہم امیگریشن اہلکاروں نے اُس کی سفری دستاویزات کی جانچ پڑتال کیں تو ان کے جعلی ہونے کا انکشاف ہوا جس کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا۔ عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران استغاثہ نے بتایا کہ ملزم برطانوی پاسپورٹ پر دُبئی سے جرمنی جا رہا تھا، تاہم امیگریشن اہلکاروں نے غور کیا تو پتا چلا کہ ملزم کے پاس موجود پاسپورٹ دراصل اُس کا نہیں تھا، بلکہ اُس نے پہلا صفحہ خود تیار کر کے اس پر بڑی مہارت سے جوڑا تھا، جس میں جعلسازی سے اُس کی تصویر اور دیگر کوائف درج کیے گئے تھے۔جبکہ ملزم نے اس پاسپورٹ پر جو جرمنی کا ویزہ لگوا رکھا تھا وہ بھی جعلی نکلا۔ جعلساز ملزم کی ہوشیار یہیں پر ختم نہیں ہوئی تھی بلکہ یہ بات بھی سامنے آئی کہ ملزم کا دُبئی انٹری اور ایگزٹ کا ویزہ بھی جعلی طور پر تیار کیا گیا تھا۔پاکستانی نوجوان کو جعلی دستاویزات تیار کر کے دھوکا دہی کا مرتکب ہونے کے باعث گرفتار کر لیا گیا۔ عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران ملزم نے اپنے پاس موجود سفری دستاویزات کے جعلی ہونے سے انکار کر دیا۔ تاہم امیگریشن حکام کی جانب سے ملزم کے خلاف کچھ شواہد پیش کیے گئے۔ عدالت نے اس مقدمے کی سماعت 23 فروری 2020ء تک ملتوی کر دی ہے، اگلی سماعت پر ملزم کو جعلسازی اور دھوکا دہی کے الزام میں سزا سُنائے جانے کا بھرپور امکان ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل بھی کئی پاکستانی سفری دستاویزات میں ہیر پھیر کرنے کے الزام میں متحدہ عرب امارات میں قید کی سزا بھُگت رہے ہیں۔ ان پاکستانیوں کو سزا کی مُدت ہونے کے بعد ڈی پورٹ کر دیا جاتا ہے۔