ایک جوان بیوہ

ابن جوزی روایت کرتے ہیں کہ ھرات میں ایک سادات فیملی تھی ۔خاتون جوانی میں بیوہ ہوگئیں ۔بچوں والی تھیں ۔تنگ دستی آئی توانہوں نے سمرقندکی طرف ہجرت کی ۔وہاں پہنچیں تولوگوں نے پوچھاکہ یہاں کوئی سردار،کوئی سخی ہے ؟؛لوگوں نے بتایاکہ یہاں دوسردارہیں ۔ایک مسلمان ہے اورایک آتش پرست ۔خاتون مسلمان سردار کے گھرگئیں اورکہاکہ میں آل رسولﷺ ہوں۔

پردیسن ہوں ،نہ کھانے کوکچھ ہے نہ ہی رہنے کاکوئی ٹھکانہ ہے ۔ سردارنے پوچھا:تمھارے پاس کوئی نسب نامہ ہے ؟ ’’خاتون نے کہا‘‘:بھائی میں ایک نادارپردیسن ہوں ،میں سندکہاں سے لاؤں ؟ ’’وہ کہنے لگا‘‘:یہاں توہردوسراآدمی کہتاہے کہ میں سید ہوں ،آل رسولﷺ ہوں ،یہ جواب سن کروہ خاتون وہاں سے نکلیں اورمجوسی سردارکے پاس گئیں ۔وہاں اپناتعارف کرایااس نے فورا اپنی بیگم کوان کے ہمراہ بھیجاکہ جاؤان بچیوں کولے آؤ،رات سردہے ،خاتون اوران کی بچیوں کوکھاناکھلاکرمہمان خانے میں سونے کیلئے جگہ دے دی گئی ۔ اسی رات کومسلمان سردارنے خواب دیکھاکہ رسول ﷺ جنت میں سونے سے بنے ایک خوبصورت محل کے دروازے پرکھڑے ہیں ’’یہ عرض کرتاہے ‘‘:یارسول اللہ ﷺ !یہ محل کس کاہے ؟آپﷺ ٖفرماتے ہیں :ایک مسلمان کاہے ،یہ کہتاہے :مسلمان تومیں بھی ہوں ’’آپ فرماتے ہیں ‘‘:اپنے اسلام کی کوئی سندپیش کرو،وہ شخص کانپ جاتاہے ،آپ ﷺ فرماتے ہیں :’’میرے گھرکی بیٹی تیرے دروازے پرچل کرآئی اورتونے اس سے سادات ہونے کی سند مانگی ؟میری نظروں سے دورہوجا۔ جب اس کی آنکھ کھلی تووہ ننگے سراورننگے پاؤں باہرنکل آیااورشورمچاناشروع کردیاکہ وہ پردیسن خاتون کہاں گئی ؟ لوگوں نے بتایاکہ وہ آتش پرست سردارکے گھرچلی گئی ۔وہ اسی حالت میں بھاگابھاگاکیااوراس سردارکے دروازے کوزورزورسے کھٹکھٹانے لگ پڑا۔

گھرکامالک باہرنکلااورپوچھا:کیاہوا؟وہ خاتون جواپنی بچیوں کے ہمراہ تمھارے گھرمیں ٹھہری ہوئی ہے ،مجھے دے دووہ میرے مہمان ہیں ۔ حضور!وہ میرے مہمان ہیں ،میں آپ کونہیں دے سکتا۔مجھ سے تین سودینارلے لواورانہیں میرامہمان بننے دو‘‘ مجوسی سردارکی آنکھوں میں آنسوبھرآئے ،کہنے لگا‘‘:بھائی میں نے بن دیکھے کاسوداکیاتھا،اب تودیکھ چکاہوں ،اب میں تمھیں کیسے واپس کردوں ؟میں خواب دیکھاکہ جنت کے دروازے پراللہ کے نبی ﷺ کھڑے تھے ،تجھے کہاجارہاتھاکہ دورہوجا!اس کے بعد رسول خداﷺ میری طرف متوجہ ہوئے اورفرمانے لگے کہ تومیری بیٹی کوکھانااورٹھکانہ دیا۔تواورتیراساراخاندان بخش دیئے گئے ہیں ۔سب کے لئے اللہ تعالی نے جنت کافیصلہ کردیاہے ۔آنکھ کھلتے ہی میں ایمان لاچکا ہوں ،میراساراخاندان کلمہ پڑھ چکاہے ،ہم وہ دولت کبھی آپ کوواپس نہیں کرینگے ۔۔۔۔ اب یہ تحریر بھی پڑھیں۔۔۔ بھارت ایک ایسی سرزمین ہے جہاں آپ کو وہ کچھ دیکھنے کو ملے گا جو آپ نے کبھی سنا نہیں ہو گا عجیب و غریب رسومات کی سرزمین تہم پرستی کا شکار افراد بھارت عجائب کی سرزمین ہے لیکن ضروری نہیں کہ یہ عجائب خوشگوار ہی ہوں۔ اکثر اوقات اس ملک سے افسوسناک خبریں ہی سامنے آتی ہیں اور ایسی ہی ایک اور خبر ریاست آندھرا پردیش سے سامنے آئی ہے۔ یہاں ایک قریب المرگ خاتون نے اپنے 13 سالہ بیٹے کی شادی ایک 23 سالہ لڑکی سے کروا دی کیونکہ اسے بیٹے سے زیادہ اپنے گھر کی دیکھ بھال کی فکر تھی۔ ٹائمز آف انڈیا کے

مطابق اس 13 سالہ لڑکے اور اس کی 23 سالہ دلہن کا تعلق ریاست آندھرا پردیش کے ضلع کرنول کے ایک دیہات سے ہے۔ ان کی شادی گزشتہ ماہ ہوئی لیکن یہ خبر میڈیا میں اب سامنے آئی ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق لڑکے کی والدہ کی خواہش تھی کہ اس کے بیٹے کی شادی بڑی عمر کی خاتون کر دی جائے جو گھر کی اچھی طرح دیکھ بھال کر سکے۔ ماں نے خود ہی لڑکی کا انتخاب کیا اور 27 اپریل کے دن شادی کی تقریب منعقد کی گئی۔ اس شادی کے موقع پر بنائی گئی تصاویر جلد ہی سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئیں۔ جب کم عمر لڑکے کی شادی پر قانونی کارروائی کا خطرہ محسوس ہوا تو دونوں خاندان اپنے گھروں کو چھوڑ کر فرار ہوگئے۔ سرکاری اہلکاروں کی ایک ٹیم نے دونوں گھروں کا دورہ کیا لیکن وہاں صرف تالے پڑے تھے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

izmir escort
php shell
sakarya escort adapazarı escort beylikdüzü escort esenyurt escort istanbul escort beylikdüzü escort istanbul escort avcılar escort beylikdüzü escort şişli escort
istanbul escort bayan bilgileri istanbul escort ilanlari istanbul escort profilleri hakkinda istanbul escort sitesi istanbul escort numaralari istanbul escort fotograflari istanbul escort bayanlarin iletisim numaralari istanbul escort aramalari yapilan site istanbul escort istanbul escort