’’ن لیگ کے ٹکٹ پر منتخب ہوا لیکن عمران خان جیسا سچا اور دیانت دار آدمی نہیں دیکھا۔۔۔ (ن) لیگ اقتدار میں آنے کے لیے کس حد تک گر سکتی ہے ؟اہم (ن)لیگی رہنما نے پاکستانیوں کی آنکھیں کھول دیں

اسلام آباد (ویب ڈیسک)لیگی ایم پی اے اشرف انصاری پی ٹی آئی کی تقریب میں پہنچ گئے ، لیگی ایم پی اے کو دیکھ کر حاضرین حیران رہ گئے ، اشرف انصاری نے کہا مسلم لیگ ن کے ٹکٹ پر منتخب ہو، عمران خان کے اچھے اقدام پر ان کا ساتھ دوں گا ۔ قومی موقر نامے

میں شائع رپورٹ کے مطابق لیگی ایم پی اے کا مزید کہنا تھا کہ اقوام متحدہ میں تقریر کے بعد عمران خاں کیساتھ کھڑے ہیں ، اخلاقی جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے عمران خان کا ساتھ دیا ، عمران خان اپنے نظریے سے ہٹ گئےتو ساتھ چھوڑ دیں گے ، تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار نے لیگی ایم پی اے کو ٹائیگرز فورس کی جیکٹ اور کیپ پہنائی ۔ قبل ازیں مسلم لیگ (ن) کے 6 ارکان پنجاب اسمبلی قیادت کی اجازت کے بغیر وزیراعلیٰ پنجاب سے ملنے پہنچ گئے۔لیگی رہنما عظمیٰ بخاری نے ارکان کی وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے 6 ارکان اسمبلی وزیراعلی سے ملے اور انہوں نے یہ ملاقات پارٹی قیادت کی اجازت کے بغیر کی ہے۔عظمیٰ بخاری نے کہا کہ پیپلزپارٹی کا بھی ایک رکن وزیراعلی پنجاب سے ملاہے، ہم نے اپنے ارکان کے خلاف کارروائی کے لیے قیادت کو سفارش کردی ہے۔دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات کرنے والوں میں (ن) لیگ کے میاں جلیل احمد شرقپوری، چوہدری اشرف علی انصاری، نشاط احمد ڈاہا ، غیاث الدین، اظہر عباس اور محمد فیصل خان نیازی شامل ہیں جب کہ پیپلز پارٹی کے رکن پنجاب اسمبلی غضنفر علی بھی وزیراعلیٰ سے ملے۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن میں دُوریاں پیدا ہونے لگیں، بلاول بھٹو کی اےپی سی کی تجویز پر تاحال ن لیگی قیادت نے کوئی جواب نہیں دیا، پیپلزپارٹی نے اےپی سی کیلئے متبادل حکمت عملی پرغور شروع کردیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو

زرداری کی جانب سے اےپی سی بلانے کیلئے ن لیگ کو تجویز دی گئی تھی۔بلاول بھٹو نے کہا تھا کہ ابھی اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کورونا مثبت آنے کے باعث بیمار ہیں وہ صحتیاب ہوجائیں گے تو حکومت کیخلاف اے پی سی بلا کر آئندہ کا لائحہ عمل مرتب کریں گے۔ لیکن پیپلزپارٹی قیادت کو شدید تشویش ہے کہ ن لیگی قیادت نے بلاول بھٹو کی تجویز کا تاحال جواب نہیں دیا۔ شہباز شریف صحتیاب بھی ہوچکے ہیں اس کے باوجود انہوں نے بلاول کی تجویز کا جواب دینے کیلئے کوئی رابطہ نہیں کیا۔حتیٰ کہ بلاول بھٹو لاہور میں موجود رہے، اس کے باوجود ان سے کوئی رابطہ نہیں کیا گیا۔ پیپلزپارٹی قیادت کو لگ رہا ہے کہ ن لیگ سردمہری کا شکار ہے۔ جس کے باعث پیپلز پارٹی نے متبادل حکمت عملی پر غور شروع کر دیا ہے۔ پیپلز پارٹی اپنی حکمت عملی وضع کرنے کے بعد حکومت مخالف سرگرمیاں تیز کردے گی۔ واضح رہے 28جون کو اسلام آباد میں چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے مسلم لیگ ن کے پارلیمانی لیڈر خواجہ آصف، جےیوآئی ف کے اکرم درانی، جماعت اسلامی کے میاں اسلم، اور دوسری جماعتوں کے رہنماؤں کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ عوام دشمن بجٹ کو مسترد کیا جاتا ہے۔کورونا وباء پرتمام اپوزیشن نے ذمہ دارانہ کردارادا کیا۔ عمران خان کا وزیراعظم ہونا قوم کی صحت اورمعاشی صورتحال کیلئے خطرہ ہے۔ وباء کا مقابلہ کرنے کیلئے ن لیگ، پیپلزپارٹی اور دیگر جماعتوں میں قیادت موجود ہے۔ وباء کا مقابلہ کرنے کیلئے تحریک انصاف میں قیادت موجود نہیں۔ شہبازشریف بیمار ہوتے ہوئے بھی عمران خان کا پسینہ نکال رہے ہیں۔اپوزیشن آج بھی حکومت کو ٹف ٹائم دے رہی ہے کل بھی دے گی۔ وباء کے دوران عام انتخابات کرانا مشکل ہوں گے۔ سیاسی جماعتوں کو مل کر جمہوری حل نکالنا چاہیے۔ اٹھارویں ترمیم سے جمہوریت کو تحفظ ملا۔ عالمی اداروں کی بات مان کر موجودہ بحران سے نمٹا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر شہباز بیمار ہیں،ان کو اے پی سی بلانے کی تجویز دی ہے، شہباز شریف ٹھیک ہوجائیں، جلد اے پی سی بلائیں گے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

izmir escort
php shell
sakarya escort adapazarı escort beylikdüzü escort esenyurt escort istanbul escort beylikdüzü escort istanbul escort avcılar escort beylikdüzü escort şişli escort
istanbul escort bayan bilgileri istanbul escort ilanlari istanbul escort profilleri hakkinda istanbul escort sitesi istanbul escort numaralari istanbul escort fotograflari istanbul escort bayanlarin iletisim numaralari istanbul escort aramalari yapilan site istanbul escort istanbul escort