پاک فوج کا وہ سربراہ جو جنگ کے دوران ہیلی کاپٹر پر دشمن کے علاقے میں پہنچ گیا، مزید جانئیے

کارگل کی جنگ کا ایک عظیم واقعہ کارگل کی جنگ کے دوران ایک وقت وہ بھی آگیا تھا جب چیف آف آرمی سٹاف جنرل پرویز مشرف دشمن کی سرحد پار کرکے نہ صرف اس چوٹی پر پہنچ گئے تھے جسے پاک فوج نے فتح کرلیا تھابلکہ ایک رات وہاں قیام کرکے اگلے دن عید قرباں کی نماز بھی وہیں ادا کی۔عسکری تاریخ کا

یہ انوکھا واقعہ ہے کہ جب کسی فوج کے سربراہ نے جنگ کے دوران ہر طرح کی احتیاط بالائے طاق رکھ دی تھی۔ جنرل پرویز مشرف کا دوران جنگ دشمن کے علاقے میں ہیلی کاپٹر پر پہنچ جانا ایک غیر معمولی واقعہ تھا جس نے کارگل کے محاذ کو گرما کر رکھ دیا تھا ۔کارگل کی جنگ کو انتہائی قریب سے دیکھنے والے پاک فوج کے سابق کرنل اشفاق حسین نے اپنی کتاب ’’ استغفراللہ جنٹلمین‘‘ میں جہاں کارگل کی جنگ میں جنرلز کی غلطیوں کا ذکر کیا ہے وہاں انہوں نے جنرل پرویز مشرف کے حوالہ سے انکشاف کیا ہے کہ انہوں نے کنٹرول لائن پار کرکے ایک رات وہاں قیام کیا اور نماز عید پڑھ کر واپس آئے تھے ۔اس واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے وہ لکھتے ہیں ’’ٹھیک دو دنوں بعد 28مارچ 1999ء کو صبح دس بجے گلتری میں ایک ہیلی کاپٹر اترا اور اس سے برآمد ہونے والا پہلا شخص تھا چیف آف آرمی سٹاف جنرل پرویز مشرف۔ ان کے ساتھ دسویں کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل محمود، چیف آف جنرل سٹاف محمد عزیز خان۔ کمانڈر ایف سی این اے ہیڈکوارٹر کے ایک سٹاف آفیسر۔ 80 بریگیڈ کے کمانڈر

اور بریگیڈیئر مسعودع اسلم نے ان کا اسقبال کیا۔ایف سی این اے کمانڈر میجر جنرل جاوید حسن خوشی سے تمتمارہے تھے اور اپنی کامیابیاں چیف کو دکھانے کے لئے بے تاب۔ یہی حال بریگیڈ کے کمانڈر بریگیڈیئر مسعود کا تھا جو اس بات میں اپنی عزت افزائی محسوس کررہے تھے کہ چیف نے اپنے دورے کیلئے سب سے پہلے ان کے ’’فتح کردہ‘‘ علاقے کا انتخاب کیا ہے۔ وہ جلد از جلد چیف کو لائن آف کنٹرول کے پار لے جاکر وہ سارے علاقے دکھانا چاہتے تھے جو انہوں نے (دشمن کی غیر موجودگی میں) فتح کئے تھے۔ آنے والے مہمانوں کو جلدی جلدی چائے اور ہلکے پھلکے لوازمات پیش کئے گئے اور پھر عزت مآب مہمان لاما ہیلی کاپٹروں میں بیٹھ کر لائن آف کنٹرول کے پار سفر پر روانہ ہوگئے۔ ان کی اگلی منزل لائن آف کنٹرول سے 11 کلومیٹر آگے واقع زکریا مستقر تھا جہاں وہ 10 بجکر 40 منٹ پر اترے۔ 12این ایل آئی کے کمانڈنگ آفیسر لیفٹیننٹ کرنل امجد شبیر، نائب کمانڈر میجر طارق اور یونٹ کے ایڈجوائنٹ کیپٹن ریحان بشیر نے ان کا استقبال کیا۔اس موقع پر فوجی جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے چیف آف آرمی سٹاف جنرل پرویز مشرف نے فرمایا’’ہم دشمن پر ایسی کاری ضرب لگائیں گے جسے وہ کبھی فراموش نہیں کرسکے گا۔‘‘۔ انہوں نے جوانوں کو شاباش دی اور کہا کہ یلدرم (12 این ایل آئی کا عرفی نام) کے جوانوں کو تاریخ میں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ انہوں نے وعدہ کیا کہ آپریشن کی تکمیل کے بعد ان کی یونٹ کوہیٹل آنر اور نشان (پاکستان کا پرچم) عطا کیا جائے گا۔ خطاب کے بعد چیف آف آرمی سٹاف نے اردگرد کا مزید مفتوحہ علاقہ دیکھنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ چنانچہ انہیں ایک لاما ہیلی کاپٹر میں اردگرد کے علاقے کی سیر کرائی گئی۔ اس سے ان کے شوق کو مہمیز ملی اور انہوں نے رات وہیں گزارنے کا فیصلہ کیا۔ دوسرے دن عید الاضحی تھی

جو چیف آف آرمی سٹاف اور دوسرے سینئر افسروں نے لائن آف کنٹرول کے پار 12این ایل آئی کے جوانوں کے ساتھ منائی‘‘ہماری تحریر پسند آئے تو ضرور شئیر کریں

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

izmir escort
php shell
sakarya escort adapazarı escort beylikdüzü escort esenyurt escort istanbul escort beylikdüzü escort istanbul escort avcılar escort beylikdüzü escort şişli escort
istanbul escort bayan bilgileri istanbul escort ilanlari istanbul escort profilleri hakkinda istanbul escort sitesi istanbul escort numaralari istanbul escort fotograflari istanbul escort bayanlarin iletisim numaralari istanbul escort aramalari yapilan site istanbul escort istanbul escort