ایک نیک آدمی کشتی میں‌بیٹھ کر جب دریا کے درمیان پہنچا تو۔۔۔

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ایک نیک آدمی شادی کے بعد بیوی کو لے کر اپنے گھر لوٹ رہا تھا۔راستے میں دریا عبور کرنا پڑا۔ آدمی نے ایک کشتی کا انتظام کیا اور وہ دونوں کشتی میں بیٹھ کر دریا عبور کرنے لگے۔ کشتی بیچ دریا پہنچی ہی تھی کہ دریا میں طوفان آ گیا۔

اس صورتحال میں بیوی کا خوف سے برا حال ہو گیا لیکن آدمی ایسے اطمینان سے بیٹھا رہا جیسے کچھ بھی نہیں ہوا۔ شوہر کی غیر معمولی حرکت دیکھ کر بیوی کو حیرت ہوئی وہ غصے سے چلا کر بولی۔ آپکو نظر نہیں آ رہا کہ طوفان کشتی کو ڈبونے لگا ہے اور ہماری موت سر پر منڈ لا رہی ہے مگر آپ اطمینان سے بیٹھے ہیں۔ یہ سنتے ہی خاوند نے اپنی تلوار میان سے نکالی اور بیوی کی شہ رگ پر رکھ دی۔ بیوی ہنس پڑی اور بولی یہ کیسا مذاق ہے۔ خاوند نے پوچھا کیا آپ اب بھی موت سے خوفزدہ نہیں ہو رہیں؟ کیا آپ کو نہیں لگ رہا کہ میں آپکا گلا کاٹ دوں گا ؟ یہ سن کر بیوی بولی مجھے آپ پر اور آپکی محبت پر اعتماد ہے۔ مجھے پتا ہے آپ مجھ سے بے انتہا محبت کرتے ہیں اور یہ تلوار آپ کے ہاتھ میں ہے تو مجھے کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتی۔ یہ سن کر خاوند بولا جیسے آپکو میری محبت پر اعتماد ہے ویسے ہی مجھے اللہ کی محبت پر یقین ہے اور یہ طوفان بھی اللہ کے ہاتھ میں ہے۔ وہ چاہے تو اسے روک لے چاہے تو ہماری کشتی ڈبو کر بھی ہمیں بچا لے۔ یاد کھو اللہ جو بھی فیصلہ کرے وہ ہمارے حق میں بہترین ہوتا ہے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.


c99
bahelievler escort antalya escort ili escort esenyurt escort beylikdz escort avclar escort