ک ٹاک پر پابندی: عوام کی اکثریت حکومتی فیصلے سے خوش یا ناراض ؟ سروے رپورٹ جاری

ٹک ٹاک پر پابندی: عوام کی اکثریت حکومتی فیصلے سے خوش یا ناراض ؟ سروے رپورٹ جاری ، فیصلہ سنا دیا گیالاہور (ویب ڈیسک) ٹک ٹاک پر پابندی، عوام کی اکثریت نے حکومتی فیصلے کی حمایت کر دی، نجی ٹی وی چینل کی جانب سے کروائے گئے سروے میں ہزاروں افراد نے اپنی رائے کا اظہار کیا، 82 فیصد نے فیصلے کو درست قرار دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان میں پی ٹی اے کی جانب سے مشہور سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر پابندی عائد کر دیے جانے کے بعد ایک نجی ٹی وی چینل کی جانب سے اس حوالے سے عوامی رائے جاننے کیلئے سروے کروایا گیا ہے۔سروے میں عوام سے سوال کیا گیا کہ ٹک ٹاک پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ درست ہ

ے یا غلط؟۔ ہزاروں افراد کی جانب سے رائے کا اظہار کرتے اور پابندی کے فیصلے کی حمایت کی گئی ہے۔ سروے کے دوران 82 فیصد افراد نے ٹک ٹاک پر پابندی عائد کرنے کے فیصلے کو درست قرار دیا ہے، جبکہ 18 فیصد نے اس فیصلے کی مخالفت کی ہے۔واضح رہے کہ پاکستان میں ٹک ٹاک ایپ کو بند کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے جس کا عمل درآمد آج سے ہو گا۔اس حوالے سے پی ٹی اے حکام کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کو متعدد بار خط لکھ کر قابل اعتراض اور نامناسب مواد ہٹانے گیا ہے لیکن اس پر عمل درآمد نہیں کیا گیا۔جس کے بعد پاکستان میں ایپ پر پابندی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ترجمان پی ٹی اے کے مطابق ٹک ٹاک انتظامیہ کو جواب جمع کرانے کی مہلت دی تھی۔ شکایات کا ازالہ نہ کرنے پر ٹک ٹاک پرپابندی لگائی گئی۔واضح رہے کہ پی ٹی اے نے کئی موبائل اور سوشل میڈیا ایپس پر غیر اخلاقی مواد پھیلائے جانے کی شکایات کے بعد ایکشن لیا تھا۔ پی ٹی اے نے مشہور موبائل ایپ بیگو پر پابندی عائد کی تھی، جبکہ ٹک ٹاک کو حتمی وارننگ جاری کی گئی تھی۔اس حوالے سے کہا گیا تھا کہ شکایات موصول ہوئی تھیں کہ بیگو اور ٹک ٹاک ایپ پر غیر اخلاقی مواد پھیلایا جا رہا ہے۔ان شکایات کا جائزہ لینے کے بعد پاکستانی قوانین کے تحت بیگو ایپ پر ملک میں پابندی عائد کر دی گئی

۔ جبکہ موبائل ایپ ٹک ٹاک کو آخری وارننگ جاری کی گئی تھی۔ پی ٹی اے اعلامیہ میں مزید کہا گیا کہ موبائل و سوشل میڈیا ایپس کے ذریعے غیر اخلاقی مواد پھیلا کر معاشرے اور نوجوانوں پر منفی اثرات ڈالے جا رہے ہیں۔ سوشل میڈیا کمپنیاں پاکستان کے قانون کے مطابق کام کریں اور پاکستان کی اخلاقی قدروں کا خیال رکھا جائے۔ تاہم اب ٹک ٹاک کی جانب سے تسلی بخش اقدامات نہ اٹھائے جانے کے بعد پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.


c99
bahelievler escort antalya escort ili escort esenyurt escort beylikdz escort avclar escort