ٹرمپ کی ہار پر امریکی عوام میں جہاں خوشی ہے وہاں سب سے زیادہ خوشی سیاہ فاموں کو ہے

السلام علیکم! قارئین اس پیج پر خوش آمدید۔
امریکی الیکشن ہو چکے جوبائیڈن امریکہ کے نئے صدر منتخب ہو گئے جبکہ ڈونلڈ ٹرمپ نے میں نہ مانوں کی رٹ

ابھی تک لگا رکھی ہے۔امریکی عوام،ادارے تو دور کی بات ٹرمپ کو تو ٹوئٹر انتظامیہ نے بھی وارننگ جاری کر دی ہے کہ اگر اسی طرح وہ صدر ہونے کے دعوﺅں کے ٹویٹ کرتے رہے تو انہیں وائٹ ہاﺅس کی طرح ٹوئٹر کی دنیا سے بھی نکال دیا جائے گا۔ٹوئٹر کی ہار پر امریکی عوام میں جہاں خوشی ہے وہاں سب سے زیادہ خوشی سیاہ فاموں کو ہے کیونکہ ٹرمپ کے دور حکومت میں سب سے زیادہ مظالم انہی سیاہ فام لوگوں پر ڈھائے گئے تھے۔سی این این کو انٹرویو دیتے ایک سیاہ فام شخص کی آنکھوں سے آنسوﺅں کی لڑی جاری ہو گئے جس نے روہانسے لہجے میں کہا کہ آج مبارک دن ہے کہ ٹرمپ الیکشن ہار گیا۔”آئی کانٹ بریتھ“کی طرح امریکہ میں بہت سے ایسے لوگ ہیں جنہیں سانس نہیں آتا تھا۔سیاہ فاموں کے ساتھ ٹرمپ نے ملکی سطح پر جو رویہ اپنا رکھا تھا وہ سب کے سامنے ہے۔ہم روز صبح اٹھتے تھے تو ٹرمپ کا ایک نیا ٹویٹ ہوتا تھا جس سے نسل پرستی کو ہوا ملتی تھی اور ہمیں باہر نکلنا مشکل ہو جاتا ہے۔ہمارے سیاہ فام بھائی کی گردن پر پولیس والے کا پاﺅں آج بھی ہماری سانسیں بند کررہا ہے۔ہمیں پریشانی ہوتی تھی کہ ہم کیا پہنیں۔ہماری بہنیں محفوظ نہیں تھیں۔ہمیں سب سے زیادہ ڈر ہوتا تھا کہ ہماری خواتین باہر نکلیں گی تو نسل پرستی کے نام پر ان کے ساتھ ریپ کے ساتھ کچھ بھی ہو سکتا تھا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ میں نازی ازم کا کلچر پروموٹ کیااور شدت پسندی کو ہوا دی۔اب ہمیں خوشی ہے اور یہ مبارک دن ہے کہ ٹرمپ الیکشن ہار گیا ہے یہ پورے امریکہ کے لیے خوشی کا دن ہے۔اب ہم اپنی مرضی کے کپڑے پہن سکیں گے اور ہماری بہنیں بھی آزادانہ باہر جا سکیں گی اور انہیں نسل پرستی کے نام پرمظالم کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


c99
bahelievler escort antalya escort ili escort esenyurt escort beylikdz escort avclar escort