عالمی وبا کی تیسری لہر کا سامنا کب ہوگا؟ ڈبلیو ایچ او نے خبر دار کر دیا

عالمی وبا کی تیسری لہر کا سامنا کب ہوگا؟ ڈبلیو ایچ او نے خبر دار کر دیا
عالمی ادارۂ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے نمائندہ خصوصی برائے کورونا ڈیوڈ نبارو نے عالمی وبا کی تیسری لہر کے حوالے سے دنیا کو خبردار کردیا۔ بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے کورونا معاملات دیکھنے والے نمائندہ خصوصی ڈیوڈ نبارو نے تمام ممالک کو خبردار کیا کہ 2021 کے آغاز پر کورونا کی تیسری لہر

کا سامنا ہوسکتا ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر حکومتوں نے کورونا وائرس کی دوسری لہر پر قابو پانے کے اقدامات نہ کیےاور غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا تو یورپ میں 2021 کے آغاز پر وبا کی تیسری لہر اٹھ سکتی ہے۔ نبارو کا کہنا تھا کہ عالمی ادارہ صحت کورونا کی پہلی لہر پر قابو پانے کے بعد موسم گرما میں بنیادی ڈھانچے کی تشکیل میں ناکام رہا جس کی وجہ سے ہمیں دوسری لہر کا سامنا کرنا پڑا، ہم اس بار بھی بنیادی ڈھانچہ قائم کرنے میں ناکام رہے تو آئندہ برس تیسری لہر کا سامنا ہوسکتا ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ کورونا کی تیسری لہر یورپ، سوئٹزرلینڈ سمیت دیگر ممالک کے لیے بہت زیادہ خطرناک ثابت ہوسکتی ہے کیونکہ اس کی شدت پہلی دو لہروں سے دگنی ہوگی ، جس کی وجہ سے مریضوں کی تعداد اور اموات میں ہوشربا اضافہ ہوگا۔ نبارو کا مزید کہنا تھا کہ کسی بھی ملک بالخصوص ایشیائی خطے کو کورونا پابندیوں میں نرمی نہیں کرنا چاہیے، ہمیں اُس وقت تک انتظار کرنا ہوگا جب تک کیسز کا گراف نیچے کی جانب نہیں آجاتا۔ پوری دنیا کورونا کی لپیٹ میں کورونا وائرس کی دوسری لہر نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے، دنیا بھر میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 5 کروڑ 89 لاکھ 83 ہزار 604 سو ہوگئی ہے جبکہ اس کے سبب اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھنے والوں کی تعداد 13 لاکھ93 ہزار575 تک جا پہنچی ہے۔ دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ 4 کروڑ7 لاکھ 65 ہزار563 افراد صحتیاب بھی ہوئے ہیں۔ کورونا وائرس کے کیسز اور اس سے اموات کے اعتبار سے 10 سرِ فہرست ممالک میں 33 کروڑ سے زائد آبادی کا حامل امریکا پہلے نمبر پر ہے جہاں اس وائرس سے اب تک 262,696 افراد موت کے منہ میں پہنچ چکے ہیں۔ ایک ارب سے زائد آبادی والا ملک بھارت کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے

اضافے کے ساتھ اس فہرست میں دوسرے نمبر پر ہے، جہاں اس سے 133,773 ہلاکتیں ہو چکی ہیں جبکہ اس موذی وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 9,140,312 ہے۔ برطانیہ میں کورونا وائرس کے کیسز اور اس سے اموات دوبارہ تیزی بڑھنے لگیں، یہاں اس سے اموات 54 ہزار 626 تک جا پہنچی ہیں جبکہ کورونا وائرس کے کیسز 14 لاکھ 93 ہزار 383 ہو چکے ہیں۔ 1 ارب 43 کروڑ سے زائد آبادی والے ملک چین میں کورونا وائرس کا پہلا کیس سامنے آیا تھا، چین اس فہرست میں 68 ویں نمبر پر پہنچ چکا ہے، جہاں کورونا مریضوں کی تعداد 86,442 ہو چکی ہے تاہم اس سے ہونے والی اموات کی تعداد 4 ہزار 634 پر رکی ہوئی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.