پمزہسپتال کے سٹاف کے 181 افراد کورونا کا شکار ، مرکزی او پی ڈی بند

پمزہسپتال کے سٹاف کے 181 افراد کورونا کا شکار ، مرکزی او پی ڈی بند
ہسپتال میں ایمرجنسی کےعلاوہ کوئی سرجری نہیں ہوگی ، ہسپتال میں صرف شعبہ زچہ بچہ اور چلڈرن ہسپتال کی او پی ڈیزکھلی رہیں گی ، ترجمان پمز اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 نومبر2020ء) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے مشہور و معروف سرکاری ہسپتال پمز کے عملے میں سے 181 افراد کورونا کا شکار ہوگئے ، او پی ڈی بند کردی گئی۔ تفصیلات کے مطابق ہسپتال کے ہیلتھ پروفیشنلز کی بڑی تعداد میں کورونا وائرس

کی تشخیص کے بعد انتظامیہ کی طرف سے خدمات کو محدود کرنے کا اعلان کر دیا گیا اس کے ساتھ ہی پمز ہسپتال کی مرکزی او پی ڈی سروس بھی بند کردی گئی۔ اس بارے میں ہسپتال ترجمان ڈاکٹر وسیم خواجہ نے بتایا کہ مرکزی او پی ڈی کو بند کرنے کا فیصلہ کورونا کی صورتحال کے باعث کیا گیا ، اس دوران ہسپتال میں ایمرجنسی کےعلاوہ کوئی سرجری نہیں ہوگی ، تاہم کورونا صورتحال میں بہتری آنے پراو پی ڈی سروس کو ایک بار پھر بحال کیا جائے گا جب کہ بندش کے دوران ہسپتال کے شعبہ زچہ بچہ ، چلڈرن ہسپتال کی او پی ڈیزکھلی رہیں گی اورموجودہ حالات میں پمزکا شعبہ ایمرجنسی بھی فعال رہے گا۔ اس ضمن میں این ای او سی کی جانب سے ملک بھر میں طبی عملے میں کورونا کی تشخیص سے متعلق رپورٹ جاری کردی گئی ، رپورٹ میں بتایا گیا کہ پاکستان میں طبی عملے کے 10 ہزار 50 افراد کورونا وائرس سے متاثر جبکہ ڈاکٹر، نرس اور دیگر طبی عملے کے 98 افراد کورونا سے جاں بحق ہوچکے ہیں۔ این ای او سی کے مطابق طبی عملے میں کورونا کے سب سے زیادہ کیسز

بالترتیب خیبرپختونخوا، پنجاب اور سندھ میں رپورٹ ہوئے۔ فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا میں سب سے زیادہ 2 ہزار 686 اور پنجاب اور سندھ میں بالترتیب 2 ہزار 638 اور 2 ہزار 578 کیسز رپورٹ ہوئے ، این ای او سی کے مطابق ملک میں مجموعی طور پر 6 ہزار 295 ڈاکٹرز، ایک ہزار 189 نرسیں اور 2 ہزار 566 طبی مراکز کا دیگر عملہ کورونا وائرس کا شکار ہوئے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

boztepe escort
trabzon escort
göynücek escort
burdur escort
hendek escort
keşan escort
amasya escort
zonguldak escort
çorlu escort
escort ısparta