بابراعظم پر لاہور کی رہائشی لڑکی کا 10سال تک جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے کا الزام

بابراعظم پر لاہور کی رہائشی لڑکی کا 10سال تک جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے کا الزام
بابراعظم 10 سال سے شادی کے نام پر جنسی ہراسگی کا نشانہ بنارہے ہیں،ایکشن نہ لیا گیا تو پی سی بی کے دفتر کے باہر خود سوزی کرلوں گی:حامزہ مختار لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 28 نومبر 2020ء ) پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم بھی عشق زادے نکلے،بابر اعظم کا دس سال سے لاہور کی رہائشی لڑکی حا مِزہ مختار

سے معاشقہ چل رہا تھا، حامزہ مختار نے بابر اعظم پر دس سال تک جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے کے سنگین الزامات لگا دیئے۔ لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حامزہ مختار نے کہا بابر اعظم دس سال سے مجھے شادی کے نام پر جنسی ہراسگی کا نشانہ بنارہے ہیں،ان دس سالوں میں بابر اعظم نے مجھ سے کروڑوں روپے بھی لیے۔ بابر اعظم نے ایک روپیہ بھی مجھے واپس نہیں کیا بابر اعظم کی فیملی اس پر ایک روپیہ خرچ نہیں کرتی تھی۔ بابر اعظم کئی سالوں تک مجھ سے اپنا جیب خرچ تک لیتا رہا ہے۔ جب سے بابر اعظم قومی کرکٹ ٹیم کا کپتان بنا ہے تب سے مجھ سے رابطہ نہیں کررہا۔ میں نے پی سی بی اور تھانہ نصیرآباد میں بھی بابراعظم کےخلاف کاروائی کی درخواستیں دیں لیکن ابھی تک ان کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا گیا ہے ۔ حامزہ مختار نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ فوری طور پر بابراعظم کےخلاف ایکشن لیتے ہوئے اسے کپتانی سے ہٹائے ورنہ میں پی سی بی کے دفتر کے باہر خود سوزی کرلوں گی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.