فرمائشی پروگرام

زونگ کے فرنچائز پر گیا وہاں ایک محترمہ کمپیوٹر کے سامنے بیٹھی تھی میں گیا اور اس کے سامنے بیٹھ گیا اور اپنا مسئلہ بتایامحترمہ نے کہا کہ اپنا موبائل نمبر بتائےمیں

نے کہا زیرو تین سو سولہ سر پلیز انگلش میں بتائیں، کمپیوٹر کے سامنے بیھٹی خاتون نے مجھ سے کہامیں نے کہا: انگلش میں کیوں بتاؤکیا آپ کینیڈا سے آئی ہیں یا آپ نے مجھے امریکن سمجھ لیامیری بات سن کر اس کے ساتھ بیھٹی دو خواتین بھی ہنس پڑی، منہ پر ہاتھ رکھ کر اپنی ہنسی چھپانے کی کوشش کی، محترمہ نے جب صورتحال دیکھی تو آگ بگولہ ہو گئیں، اور کہا کہ یہ کس طرح کی بات کررہے ہو بات کرنے کی تمیز نہیں تمہیں،میں نے کہا: اس میں تمیز کہا سے آگئی، قومی زبان اردو ہے اور آپ نے فرمائشی پروگرام لگایا ہوا کہ انگریزی میں بتاؤں کیوں بتاؤں انگریزی میں؟؟؟آوازیں بلند ہوئیں تو پیچھے کے کمرے سے ایک مرد نکلا اور کہا خان صاحب کیا بات ہیں کیسا شور ہے یہ؟؟میں نے ساری بات بتائی تو ہنس کر کہنے لگا چلو اپنا نمبر بتاؤ اور اُردو میں ہی بتاؤ،انگریزی زبان رابطے کا ایک زریعہ ہے، خواتین و حضرات اس کو تمیزداری اچھائی یا برائی اور اخلاق کا معیار سمجھنے سے پرہیز کریں…!
اپنی قومی زبان کی قدر کریں اگر آپ میری بات سے متفق ہیں تو اس پوسٹ کو شیئر کریں

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.