نواز شریف آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ڈی جی آئی ایس آئی جنرل فیض حمید کا استعفیٰ چاہتے ہیں

نواز شریف آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ڈی جی آئی ایس آئی جنرل فیض حمید کا استعفیٰ چاہتے ہیں
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے اس وقت لاہور کے جلسے کے حوالے سے تیاریاں کی جارہی ہیں۔مریم نواز ریلیوں کی صورت میں کارکنان کو متحد کرنے کا عمل بھی جاری رکھے ہوئے ہیں۔پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز اس بات کا واضح اعلان کرچکی ہیں

کہ 13 دسمبر کو آر یا پھر پار ہو گا۔سینئر صحافیوں کی جانب سے اس بات کا اچھا خدشہ پیش کیا جا رہا تھا کہ کہ پی ڈی ایم 3 استعفوں
کا مطالبہ کرے گی جن میں سے ایک وزیراعظم عمران خان کا ہوگا۔ اسی حوالے سے سینئر صحافی طاہر ملک کا تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہنا ہے کہ اپوزیشن اس بات سے بخوبی واقف ہیں کے جلسے میں لوگوں کی تعداد چاہے جتنی بھی ہو اس سے عمران خان کو فرق نہیں پڑتا۔ساری لڑائی تین شخصیات کے استعفوں پر ہے۔ طاہر ملک نے مزید کہا کہ نواز شریف کا خیال ہے کہ وہ تین شخصیات کا استعفی مانگیں گے جس میں آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کا استعفی شامل ہے۔ نواز شریف کہتے ہیں کہ اس کے ساتھ ساتھ تمام اراکین اسمبلی بھی استعفی دے دیں اور سندھ اسمبلی بھی توڑ دی جائے۔۔اسی حوالے سے سینئر صحافی حامد میر کا کہنا ہے کہ آنے والے دنوں میں پاکستان میں سیاسی درجہ حرارت بڑھے گا،بلکہ شاید سیاسی درجہ حرارت بڑھنے سے بھی کچھ زیادہ ہونے والا ہے۔نواز شریف کی حالیہ تقریر اور مریم نواز کا لب و لہجہ دیکھ کر لگتا ہے کہ انہوں نے قبل از وقت بہت سخت رویہ اختیار کر لیا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ وہ نہ صرف حکومت پر دباؤ ڈال رہے ہیں بلکہ ن لیگ پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کو بھی دباؤ میں لا رہی ہے۔ آصف علی زرداری اور نواز شریف کے مابین چار بار تفصیلی گفتگو ہوئی

،اس گفتگو میں اسمبلیوں سے استفعوں پر اتفاق نہیں ہوا۔اگر قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد لائی جاتی ہے تو مجھے نہیں لگتا کہ اسٹیبلشمنٹ عمران خان کے پیچھے سے ہٹے گی۔ ایک بات پر پی ڈی ایم کا اتفاق ہے کہ ہم نے اسلام آباد پر حملہ کرنا ہے۔اگر یہ اسلام آباد پر حملہ آور ہوتے ہیں تو ظاہر ہے صرف عمران خان کے استفعے کا مطالبہ تو نہیں کیا جائے گا۔ میرے خیال سے دو تین اور شخصیات کے بھی استفعے مانگے جائیں گے جس سے حالات بگڑ سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

boztepe escort
trabzon escort
göynücek escort
burdur escort
hendek escort
keşan escort
amasya escort
zonguldak escort
çorlu escort
escort ısparta