وسیم اکرم پلس کی چھٹی کا وقت ہوا چاہتا۔۔وزیراعظم کب تک عثمان بزدار کو ہٹا دیں گے؟ایسا دعویٰ کہ تہلکہ مچ گیا

وسیم اکرم پلس کی چھٹی کا وقت ہوا چاہتا۔۔وزیراعظم کب تک عثمان بزدار کو ہٹا دیں گے؟ایسا دعویٰ کہ تہلکہ مچ گیا وسیم اکرم پلس کی چھٹی کا وقت ہوا چاہتا۔۔وزیراعظم کب تک عثمان بزدار کو ہٹا دیں گے؟ایسا دعویٰ کہ تہلکہ مچ گیا سینئر ملکی صحافی اور تجزیہ کار مظہر عبا س کہتے ہیں کہ بلدیاتی الیکشن سے قبل عثمان بزدار کو وزارت اعلیٰ سے ہٹایا جا سکتاہے۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگوکرتے ہوئے مظہر عباس

کاکہناتھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی چوہدری برادران سے گذشتہ دوماہ کی ملاقاتوں اور ٹیلی فونک گفتگو سے ایک سال سے کشیدہ تعلقات کی برف پگھلی جو نئی سیاسی صورت حال میں بہت اہم ہے۔انہوں نے کہا کہ دونوں پارٹیوں کے مابین برف پگھلنے کے نتیجے میں پنجاب میں 2021ء کے وسط میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے پہلے نیا سیاسی بندوبست ہوسکتا ہے جس میں وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی تبدیلی بھی شامل ہوسکتی ہے۔ 2018ء سے وفاق اور صوبے میں اتحادی ہونے کے باوجود ایک سال سے وزیراعظم اور چوہدریوں میں عملاً بول چال نہیں تھی۔سینئر ملکی صحافی اور تجزیہ کار مظہر عبا س کہتے ہیں کہ بلدیاتی الیکشن سے قبل عثمان بزدار کو وزارت اعلیٰ سے ہٹایا جا سکتاہے۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگوکرتے ہوئے مظہر عباس کاکہناتھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی چوہدری برادران سے گذشتہ دوماہ کی ملاقاتوں اور ٹیلی فونک گفتگو سے ایک سال سے کشیدہ تعلقات کی برف پگھلی جو نئی سیاسی صورت حال میں بہت اہم ہے۔انہوں نے کہا کہ دونوں پارٹیوں کے مابین بر پگھلنے کے نتیجے میں پنجاب میں 2021ء کے وسط میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے پہلے نیا سیاسی بندوبست ہوسکتا ہے جس میں وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی تبدیلی بھی شامل ہوسکتی ہے۔ 2018ء سے وفاق اور صوبے میں اتحادی ہونے کے باوجود ایک سال سے وزیراعظم اور چوہدریوں میں عملاً بول چال نہیں تھی۔سینئر ملکی صحافی اور تجزیہ کار مظہر عبا س کہتے ہیں کہ بلدیاتی الیکشن سے قبل عثمان بزدار کو وزارت اعلیٰ سے ہٹایا جا سکتاہے۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگوکرتے ہوئے مظہر عباس کاکہناتھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی چوہدری برادران سے گذشتہ دوماہ کی ملاقاتوں اور

ٹیلی فونک گفتگو سے ایک سال سے کشیدہ تعلقات کی برف پگھلی جو نئی سیاسی صورت حال میں بہت اہم ہے۔انہوں نے کہا کہ دونوں پارٹیوں کے مابین برف پگھلنے کے نتیجے میں پنجاب میں 2021ء کے وسط میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے پہلے نیا سیاسی بندوبست ہوسکتا ہے جس میں وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی تبدیلی بھی شامل ہوسکتی ہے۔ 2018ء سے وفاق اور صوبے میں اتحادی ہونے کے باوجود ایک سال سے وزیراعظم اور چوہدریوں میں عملاً بول چال نہیں تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

boztepe escort
trabzon escort
göynücek escort
burdur escort
hendek escort
keşan escort
amasya escort
zonguldak escort
çorlu escort
escort ısparta