دھڑالے کی بارشیں ؟یا رہے گا موسم خشک ؟محکمہ موسمیات کی تہلکہ خیز پیشگوئی

دھڑالے کی بارشیں ؟یا رہے گا موسم خشک ؟محکمہ موسمیات کی تہلکہ خیز پیشگوئی،اسلام آباد(نیوز ڈیسک)موسم کی بڑی ویب سائٹ ویدر بسٹرز پاکستان کے مطابق پاکستان کے شمال، مغرب اور جنوب مغرب میں بارشیں معمول کے مطابق یا معمول سے تھوڑا کم ہونے کی توقع ہے

جبکہ جنوبی پنجاب اور سندھ میں موسم زیادہ تر خشک رہیگا۔پاکستان بھر میں درجہ حرارت معمول کے مطابق یا معمول سے تھوڑا زیادہ رہنے کا امکان ہے۔ شدید موسمی سرگرمیاں رونما ہو سکتی ہیں جس میں تیز آندھیاں، ژالہ باری اور آسمانی بجلی گرنے کے خدشات شامل ہیں۔ رواں ماہ مغربی ہواؤں کے 4 سے 7 سلسلے ملک کو متاثّر کر سکتے ہیں جن میں سے 2 سے 3 سلسلوں سے طاقتور یا شدید گرج چمک کے طوفان بھی رونما ہو

سکتے ہیں، جو کہ خیبر پختونخواہ بشمول سابقہ فاٹا کے زیادہ تر علاقوں، بالائی پنجاب (مشرقی حصّوں کو چھوڑ کر)، آزاد کشمیر، شمالی سندھ کے چند مقامات اور شمال مشرقی بلوچستان پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔اپریل کے پہلے ہفتے میں ہی موسمی سرگرمیاں رونما ہونے کی توقع ہے۔ اپریل کے دوسرے اور تیسرے ہفتے میں زیادہ تر خشک مغربی ہواؤں کے سلسلے متاثّر کریں گے۔ اپریل کے چوتھے ہفتے سے ایک مرتبہ پھر موسمی سرگرمیاں رونما ہونے کا امکان ہے۔خیبر پختونخواہ میں سابقہ فاٹا اور انتہائی شمال مغربی مقامات میں

بارشیں زیادہ تر معمول کے مطابق ہونگی، تاہم ژالہ باری کے امکانات کافی زیادہ ہونگے۔مشرقی خیبر پختونخواہ کے زیادہ تر علاقوں اور شمال مشرقی بلوچستان میں بارشیں معمول سے کم متوقع ہیں۔خطّہٰ پوٹھوہار، بالائی پنجاب اور آزاد کشمیر میں بارشیں معمول سے کم متوقع ہیں، جن کی شدّت جنوب مشرق کی سمت میں مزید کم ہوگی۔جنوبی پنجاب، سندھ اور ساحلی بلوچستان میں اپریل میں موسم زیادہ تر خشک رہیگا۔الائی خیبر پختونخواہ، پنجاب، مغربی پنجاب بشمول بھکّر اور میانوالی، شمال مشرقی بلوچستان اور پنجاب کے جنوب مغربی علاقوں بشمول

راجنپور، ڈی جی خان اور سلیمان کے پہاڑی سلسلے میں 1 سے 2 طاقتور یا شدید گرج چمک کے طوفان اثر انداز ہو سکتے ہیں، جن سے بار بار آسمانی بجلی گرنے، دن کی گرمی کے بعد طاقتور مٹّی کے طوفان اور طویل دورانئیے کیلئے موٹے حجم کی ژالہ باری جیسے موسمی واقعات رونما ہو سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *