il viagra ha controindicazioni nome viagra gel al posto del viagra nuovo viagra viagra forme farmaceutiche

پولیس والا ہوں ۔۔۔!!! بغیر ثبوت کے کوئی بات نہیں کرتا،کس نے کیا کرنے کا کہا تھا ، نئے الزامات نے کھلبلی مچادی ،خبر پڑھ کر آپ کے رونگٹے کھڑے ہوجائینگے

پولیس والا ہوں ۔۔۔!!! بغیر ثبوت کے کوئی بات نہیں کرتا،کس نے کیا کرنے کا کہا تھا ، نئے الزامات نے کھلبلی مچادی ،خبر پڑھ کر آپ کے رونگٹے کھڑے ہوجائینگے پی ٹی آئی کی جماعت اور خاص کر وزیراعظم ہاؤس سے سابق ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن

کے الزامات کی تردید کی جا رہی ہے۔اس سلسلے میں مشیر وزیراعظم شہزاد اکبر نے باقاعدہ ایک پریس کانفرنس کی اور بشیر میمن کے خلاف ہرجانے کا نوٹس بھی بھیجا جبکہ فروغ نسیم صاحب نے بھی ایک ٹی وی شو میں الزامات کی تردید ضرور کی مگر اس کے علاوہ اور کچھ بھی نہیں کہا۔جبکہ عمران خان نے ان الزامات کی وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ میں نے میمن صاحب کوخواجہ آصف کے اقامہ کی تحقیقات کا کہا تھا اس کے علاوہ اور کسی کیس کی تحقیقات کے حکم نہیں دیے۔

جبکہ بشیر میمن صاحب اپنے الزامات پر نہ صرف اڑے ہوئے ہیں بلکہ انہوں نے مزید بھی کئی انکشافات کر دیے ہیں۔نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے ان کاکہنا تھا کہ میں وزیراعظم ہاؤس دن میں دو دو بار گپیں لگانے نہیں جاتا تھا۔نہ تو وزیراعظم کے پاس اتنا ٹائم ہوتا ہے کہ وہ کسی کو بلا کر اس سے گپ شپ لگائے اور نہ ہی کسی سینئر عہدیدار کے پاس اتنا وقت ہوتا ہے کہ وہ وزیراعظم کا حال چال پوچھنے کے لیے دن میں دو بار جائے۔آپ وزیراعظم ہاؤس کا ریکارڈ نکلوا کر دیکھ لیجیے اگر میں ہفتے میں کئی بار وہاں جاتا تھا تو کسی کام کے سلسلے میں ہی جایا کرتا تھا

نا۔بشیر میمن کے اس جواب پر سینئر صحافی رؤف کلاسرا نے پوچھاکہ آپ نے جو الزامات لگائے ہیں کیا آپ کے پاس ان کے ثبوت بھی ہیں یا آپ ایسے ہی کہہ رہے ہیں تو اس سوال کے جواب میں بشیر میمن نے کہا کہ میں پولیس افسر رہا ہوں اور ڈی جی کے عہدے سے ریٹائر ہوا ہوں تو ایسا کیسے ہو سکتا ہے کہ میرے پاس کسی بات کا ثبوت نہ ہو اور میں وہ الزام عائد کر دوں۔ہم تو بغیر ثبوت کے کوئی کام بھی نہیں کرتے تو الزام لگانا تو دور کی بات ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ میں کسی بھی فورم پرجانے کے لیے تیار ہوں اورسب کو اپنے گریبان میں جھانکنے کی ضرورت ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.