اسکول وین سے ایکسیڈنٹ کے بعد ٹرک ڈرائیور کاایساعمل جس نے اس کوامرکردیا

اسکول وین سے ایکسیڈنٹ کے بعد ٹرک ڈرائیور کاایساعمل جس نے اس کوامرکردیا

عام طورپرجب کوئی حادثہ ہوتاہے توانسان سب سے پہلے خود کوبچانے کی کوشش کرتاہے اس وقت انسان کوصرف اورصرف اپناہوش ہوتاہے ۔اس وقت میں جب اپنی جان پربنی ہوتوانسان کوکسی دوسرے کی جان کی فکرنہیں ہوتی

مگر دنیا میں کچھ ایسے لوگ بھی ہوتے ہیں جوکہ بے غرضی کی ایک مثال قائم کردیتے ہیں ۔ایسے ہی ایک انسان جوناتھن گرئیربھی تھے ۔جن کی عمر صرف 25سال تھی اوروہ باربرداری والے ٹرک چلاکرسامان ایک جگہ سے دوسری

جگہ لے جاجر اپنی گزربسرکرتے تھے ان کاتعلق سائوتھ جارجیاسے تھا۔اپنی روز مرہ کی ڈیوٹی کوانجام دیتے ہوئے جوناتھن اپنے ٹرک کوچلاتے ہوئے جارہے تھے توان کے ٹرک کا ایک اسکول بس سے حادثہ پیش آ گیا یہ حادثہ اتنا شدید تھا

کہ اس کی وجہ سے ایک جانب تو جوناتھن کے ٹرک پوری طرح تباہ ہو گیا تو دوسری جانب اسکول بس کو بھی بری طرح نقصان پہنچا-اس حادثے کے نتیجے میں جوناتھن بھی بری طرح زخمی ہو گئے مگر ان چوٹوں کے باوجود

اپنی جان بچانےکے بجائے جوناتھن کو اسکول کے بچوں کی فکر تھی تقریباً بارہ بچے اس حال میں تھے کہ وہ بس کی ٹوٹی ہوئی سیٹوں کے بیچ میں پھنس چکے تھے اور بری طرح رو رہے تھے-اس موقع پر جوناتھن نے اپنی پرواہ کرنے کے بجاۓ فوراً ہی بس کے اندر سے بچوں کو نکالنا شروع کر دیا اور دس بچوں کو اس بس سے نکالنے میں کامیاب ہو گئے- اسی دوران ریسکیو والے بھی پہنچ گئے اور انہوں نے جوناتھن کو طبی امداد فراہم کرنے کے لیے اس کو ہسپتال لے گئے-اس سارے حادثے کا سب سے بڑا اور بد ترین پہلو یہ تھا کہ جوناتھن جب ہسپتال پہنچا تب تک ان کی اپنی حالت بری طرح خراب ہو چکی تھی۔ ان کے زخموں سے بہنے والا خون بچوں

کو بچانے کے چکر میں بہت ضائع ہو چکا تھا-ہسپتال والوں نے جوناتھن کو بچانے کی بہت کوشش کی مگر وہ کامیاب نہیں ہو سکے اور جوناتھن نے بچوں کو تو بچا لیا مگر اپنی جان کی بازی ہار گئے۔ جوناتھن کی موت نے نہ صرف اس کے ماں باپ کو سخت صدمے سے دوچار کر دیا بلکہ ان کی موت کا دکھ ان والدین کو بھی تھا جن کے بچوں کو بچاتے ہوئے انہوں نے اپنی جان قربان کر دی-ان بچوں کے والدین کا جوناتھن کے حوالے سے کہنا تھا کہ جوناتھن کے سینے میں ایسا سونے کا دل تھا جو کہ دوسروں کی تکلیف کو نہ صرف محسوس کر سکتا تھا بلکہ خود کو تکلیف میں ڈال کر دوسروں کو خوشی دیتا تھا اور وہ لوگ جوناتھن کے احسان کو کبھی بھی فراموش نہیں کر سکیں گے-جوناتھن کی موت ان لوگوں کے لیے ایک مثال ہے جو کہ دوسروں کے لیے جیتے ہیں اور دوسروں کے لیے ہی مرتے ہیں-

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *